آصف زرداری،فریال تالپور کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا نہیں کہاگیا۔عدلیہ

0
556

سپریم کورٹ میں مبینہ جعلی اکاونٹس از خود نوٹس میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کرپشن اگر ہوئی ہے تو سامنے آنی چاہیے،ابھی جعلی اکاؤنٹس کی تحقیقات ہونی ہے،ایف آئی اے آصف زرداری اور فریال تالپورکو الیکشن تک نہ بلائے۔

جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 2 رکنی بینچ نے آج مبینہ جعلی بینک اکاؤنٹس سے متعلق از خود نوٹس کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران سابق صدر آصف علی زرداری کے وکیل ایڈووکیٹ فاروق ایچ نائیک عدالت عظمیٰ میں پیش ہوئے۔ دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ ہم نے کوئی ایسا حکم جاری نہیں کیا جس سے کسی کو شہرت متاثر ہو، ہم اپنے دائرہ کار میں رہتے ہوئے کام کرتے ہیں۔عدالتی حکم میں آصف زرداری،فریال تالپور کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا نہیں کہاگیا۔

چیف جسٹس نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے کہا کہ ذرا آرڈر پڑھیں کہ کن لوگوں کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم ہے۔ کیا آرڈر میں آصف زرداری اور فریال تالپور کا نام ملزمان کی فہرست میں ہے؟

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ آصف زرداری اور فریال تالپور کا نام ملزمان کی فہرست میں شامل نہیں،

جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ جن کے خلاف کرمنل کیس رجسٹرڈ ہیں ان کا نام ای سی ایل پر ڈالا گیا تھا۔

چیف جسٹس نے کہا پھر کیا آصف زرداری اور فریال تالپور کا نام ای سی ایل میں ڈالنا چاہیے تھا؟ہم نے صرف یہ کہا ہے کہ ان لوگوں کے متعلق جعلی اکاؤنٹس کھولے گئے ہیں۔

چیف جسٹس نے مزیدکہا کہ ہم بطور اعلیٰ عدلیہ ایف آئی اے کو کہیں گے کہ کسی سے تعصب نہ کرے اور آصف زرداری اور فریال تالپور کو الیکشن تک نہ بلائے۔وکلا صفائی کو عدالتی حکم سےمتعلق ابہام تھا تو عدالت سےرجوع کرلیتے بشکریہ روزنامہ جنگ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here