الیکشن میں ووٹ نہ پیر کو ملے گا نہ میر کو ملے گا بلکہ ووٹ تیر کو ملے گا

0
443


چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ عمران خان کہتاہے وہ ہمیں ووٹ نہیں دیگالیکن انہوں نے سینیٹ میں ڈپٹی چیئرمین کے لیے ہمیں ووٹ دیا‘وہ آئندہ بھی ہمارا ساتھ دیں گے‘خان صاحب صبح کچھ اورشام کو کچھ اوربولتے ہیں ‘سینیٹ الیکشن میں عمران کے انگوٹھے سے ابھی ہماری سیاہی تک نہیں سوکھی کہ کہہ دیا کہ پیپلزپارٹی کا ساتھ نہیں دیا‘حکومت کی جانب سے لوڈشیڈنگ کے خاتمے کا پول کھل گیا‘یہ لوگ پاناماایمنسٹی اسکیم لائے ہیں ‘ ایم کیوایم خود کام کرتی ہے نہ دوسروں کو کرنے دیتی ہے‘آئندہ الیکشن میں کراچی کے عوام نے پیپلز پارٹی کا ساتھ دیا تو ان کی قسمت بدل دینگے، 2018کے الیکشن میں ووٹ نہ پیر کو ملے گا نہ میر کو ملے گا بلکہ ووٹ تیر کو ملے گا۔جمعہ کو میرپورماتھیلو اورگھوٹکی میں میں میڈیا سے گفتگو کررہے تھے ۔میرپورماتھیلو میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ نوازشریف اپنی کوتاہیاں چھپانے کے لیے جمہوریت کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں لیکن جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں نوازشریف یہ چاہتے ہیں کہ جو بھی ہو بس وہ بچ جائیں‘ وہ چاہتے ہیں کسی نہ کسی طریقے سے سسٹم درہم برہم ہو۔ بلاول کا کہنا تھاکہ عمران خان منافقت اور جھوٹ کی سیاست کرتے ہیں‘ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کو ووٹ نہیں دیں گے لیکن سینیٹ میں ڈپٹی چیئرمین کے لیے ہمیں ووٹ دیا اور ابھی عمران خان کے انگوٹھے سے ہماری انک تک نہیں سوکھی۔ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ کراچی کی میئر شپ اور کے ایم سی ایم کیوایم کے پاس ہے، مراد علی شاہ نے ایم کیوایم کی مخالفت کے باوجود کراچی کو اونر شپ دی، اب ایم کیوایم والے آپس میں لڑرہے ہیں کوئی کام نہیں کررہے جب کہ وہ خود کچھ کرتے ہیں نہ کرنے دیتے ہیں۔چیئرمین پی پی نے کہا کہ کراچی میں تشدد کی سیاست کے پیچھے کون تھا سب کو پتا ہے، کراچی کو پہلی بار اس الیکشن میں وہ آزادی ملے گی‘حکومت کی ایمنسٹی اسکیم سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ابھی یہ اسکیم نہیں پڑھی لیکن لگتا ہے یہ لوگ پاناما ایمنسٹی اسکیم دے رہے ہیں اور اپنے آپ کو بچانا چاہتے ہیں۔اس سے قبل گھوٹکی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہاکہ ہمارے مخالفین امیروں کی سیاست کرتے ہیں‘ ان کے لیے ٹیکس اسکیم دیتے ہیں اور امیروں کا ٹیکس، قرضے معاف کرتے ہیں ‘یہ لوگ پی آئی اے، اسٹیل ملز اور قومی ادارے چھین کر اپنے دوستوں اور حواریوں کو دے رہے ہیں‘عمران خان کو سیاسی شخص نہیں سمجھتا ان کی سیاست عجیب ہے صبح ایک بات اور رات میں دوسری بات کرتے ہیں‘کرپشن کیخلاف باتیں کرنیوالے عمران خان اپنے ارد گرد دیکھیں کہ ان کے آس پاس کرپٹ لوگ کھڑے ہیں‘ سپریم کورٹ کی جانب سے نااہل قرار دیے گئے ان کی پارٹی کے جنرل سیکریٹری اور کرپشن کے الزام میں ہٹائے گئے وزیر اعلیٰ سندھ ان کے ساتھ ہیں۔ بشکریہ روزنامہ جنگ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here