طیب اردوان نے پھرفتح حاصل کر لی

0
904

رجب طیب اردوان نے ترکی کے الیکشن میں کامیابی حاصل کرلی ہے،انہوں نے 94فیصد نتائج کے اجراء میں 53فیصد ووٹ حاصل کئے ان کے مدمقابل ریپبلکن پیپلز پارٹی کے محرم انسے30فیصد ووٹ حاصل کئے۔ترک میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ترک کی تاریخ میں پہلی بار ایک ساتھ ہونے والی صدارتی اور پارلیمانی انتخابات میں طیب اردوان کے حریفوں کو شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔صدارتی انتخابات کے نتائج میں طیب اردوان کی جماعت نے 53فیصد سے زائد ووٹ حاصل کئے جبکہ پارلیمانی الیکشن میں حکمران اتحاد نے 54فیصد سے زائد ووٹ حاصل کئے ہیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ترک صدارتی انتخابات کے 90 سے زائد نتائج میں طیب اردوان نے حریفوں شکست سے دوچار کیا ہے ،تاہم ووٹ کی گنتی کا عمل جاری ہے ،دارالحکومت انقرہ سے صدارتی انتخابات میں طیب اردوان اور پارلیمانی الیکشن میں اپوزیشن جماعت کامیاب ہوئی ہے۔ترک میڈیا کے مطابق اپوزیش کے امید محرم انسے ساڑھے 30فیصد کے قریب ووٹ لینے میں کامیاب رہے ہیں جبکہ دیگر صدارتی امیدواروں میں کوئی بھی 8فیصد ووٹ لینے میں کامیاب نہیں رہا۔
پارلیمانی الیکشن میں طیب اردوان کی جماعت نے اب تک 600 میں سے295 نشستوں پر کامیابی حاصل کرلی ہے جبکہ اپوزیشن جماعت ریپبلکن پیپلز پارٹی نے 146نشستوں پر کامیابی سمیٹی ہے۔
ترکی کے مقامی وقت کے مطابق پولنگ صبح 8 بجے شروع ہوئی جو شام 5 بجے تک بلاتعطل جاری رہی اور پاکستانی وقت کے مطابق شام 7 بجے ووٹنگ کا عمل مکمل ہوا،ووٹرز کا ٹرن آئوٹ 87فیصد رہا۔ترکی کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے کہ صدارتی اور پارلیمانی انتخابات ایک ساتھ ہورہے ہیں اور صدارتی انتخاب کے لیے رجب طیب اردوان سمیت 6 امیدوار میدان میں ہیں جن میں محرم انسے، میرل ایکسینر، سلاحیتن دیمارتس، تیمل، دوگو پرینسک شامل ہیں۔ بشکریہ روزنامہ جنگ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here