میر بجا رانی نے بیوی کو قتل کیا پھر خود کشی کی

0
594

کراچی پولیس نے سندھ کے صوبائی وزیر میر ہزار خان بجارانی کی موت کو خودکشی قرار دے دیا ہے۔ ابتدائی تحقیقات میں کہا گیا ہے کہ میر ہزار خان نے پہلے اپنی اہلیہ کو قتل کیا اور اس کے بعد خودکشی کر لی۔
میر ہزار بجارانی اور ان کی اہلیہ کی لاشیں کراچی میں ان کی رہائش گاہ سے جمعرات کی صبح برآمد ہوئی تھیں۔
کراچی میں بی بی سی کے نامہ نگار ریاض سہیل کے مطابق پولیس اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ دستیاب ثبوت، شہادتوں اور پوسٹ مارٹم کی ابتدائی رپورٹ سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ میر ہزار خان نے پہلے بیوی کو قتل کیا جس کے بعد اسی ہتھیار سے خودکشی کی۔
ڈی آئی جی جنوبی آزاد خان کے مطابق دوپہر ڈھائی بجے کے قریب درخشاں پولیس کو اطلاع ملی کہ ڈیفینس کے علاقے خیابان جانباز میں صوبائی وزیر میر ہزار بجارانی اور ان کی اہلیہ فریحہ رزاق کی لاشیں گھر کی پہلی منزل پر کمرے میں پڑی ہیں۔
اطلاع ملنے پر ڈی ایس پی اور ایس ایچ او درخشاں فوری طور پر جائے وقوع پر پہنچے جہاں فریحہ رزاق کی لاش بیڈ روم سے متصل سٹڈی روم میں موجود تھی جبکہ میر ہزار خان کی لاش اسی کمرے میں موجود صوفے پر پڑی ہوئی تھی۔
ڈی آئی جی جنوبی کی جانب سے جاری کیے گئے اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ جائے وقوعہ کے مشاہدے اور لاشوں کی صورتحال سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ موت آتشیں اسلحے کی وجہ سے ہوئی، میر ہزار خان کو سر میں ایک گولی لگی تھی جو دائیں طرف سے لگی اور بائیں طرف سے نکل گئی، جبکہ فریحہ رزاق کو تین گولیاں ماری گئی تھیں جن میں سے ایک سر اور دو پیٹ میں لگیں۔
جائے وقوع سے گولیوں کے چار خول اور دو گولیاں اور 30 بور کا پستول برآمد ہوا۔
تفتیشی اور فورینزک ٹیموں نے خون کے نمونے، گولیوں کے خول فنگر پرنٹ سمیت متعلقہ شواہد اکٹھے کر لیے ہیں، جن کا کیمیائی تجزیہ کیا جائے گا، اس کے علاوہ مزید تحقیقات کے لیے سی سی ٹی وی کا ڈی وی آر بھی قبضے میں لے لیا گیا ہے۔
شکریہ بی بی سی اردو

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here