وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک کو سپریم کورٹ نےطلب کر لیا

0
638


چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے خیبرپختونخوا میں صاف پانی فراہمی کیس کی سماعت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پرویز خٹک کو آج شام طلب کر لیا ہے۔
چیف جسٹس نے جمعرات کو سپریم کورٹ پشاور رجسٹری میں صاف پانی فراہمی کیس کی سماعت کی۔
صاف پانی فراہمی کیس میں ریمارکس دینے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ صوبے میں ہر طرح کی غلاظت پینے کے پانی میں جا رہی ہے۔
صوبائی حکومت کی جانب سے چیف سیکریٹری اعظم خان اور سیکریٹری صحت عدالت میں پیش ہوئے۔’عدالت نے چیف سیکریٹری سے پوچھا کہ صوبے میں سیوریج کا پانی کہاں جا رہا ہے؟ چیف سیکریٹری نے عدالت کو بتایا کہ سیوریج کا پانی نہروں اور دریاؤں میں جا رہا ہے۔
چیف جسٹس نے اعظم خان سے استفسار کیا کہ کیا سیوریج کا پانی نہروں اور دریاؤں میں جانا چاہیے؟ جس پر ان کا کہنا تھا کہ سیوریج کا پانی نہروں اور دریاؤں میں نہیں جانا چاہیے۔
میاں ثاقب نثار نے چیف سیکریٹری سے کہا کہ وہ صوبے کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کو شام کو طلب کر لیں کیونکہ وہ گذشتہ پانچ سالوں سے یہاں حکومت کررہے ہیں۔
چیف جسٹس نے چیف سیکریٹری سے کہا کہ ہم نے تو یہ سنا تھا کہ صوبے میں تحریک انصاف کی گوررننس بہت اچھی ہے۔
چیف سیکریٹری نے عدالت کو بتایا کہ صوبے میں 1100 مقامات پر سیوریج کا پانی نہروں اور دریاؤں میں جا رہا ہے جس کے لیے ہم ڈمپنگ گروانڈز بنا رہے ہیں۔
عدالت نے چیف سیکریٹری سے پوچھا کہ آخر یہ سارے اقدامات ابھی کیوں ہو رہے ہیں؟ اب بھی اپ نہ کریں تو ہم خود کروا دیں گے۔
خیال رہے کہ چیف جسٹس نے خیبرپختونخوا میں پینے کے صاف پانی سے متعلق از خود نوٹس لے تھا۔شکریہ بی بی سی اردو

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here