سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر سے خصوصی ملاقات

0
247

آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں مقیم میڈیا پرسنز کے ساتھ “یوم یکجہتی کشمیر” کے موقع پر سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر سے خصوصی ملاقات

ویانا آسٹریا ۔۔۔۔۔۔محمد عامر صدیق ۔۔۔۔۔۔ سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر نے آسٹریا میں غیر ملکی میڈیا افراد کی میزبانی کی جس کے موقع پر یوم یکجہتی کشمیر منایا گیا اور انہیں غیرقانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر (IIOJK) میں بھارتی مظالم سے آگاہ کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ 5 فروری کو عالمی یوم یکجہتی یوم آزادی کے طور پر پاکستانی اور کشمیری عوام نے IIOJK کے مظلوم عوام کے ساتھ اتحاد کا اظہار کیا جس نے اپنے حق خود ارادیت کے لئے بے مثال قربانیاں دیں۔
سفیر آفتاب احمد کھوکھر نے 5 اگست 2019 کو بھارتی حکومت کی غیر قانونی کارروائی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ بھارت نے 5 اگست سے بلا تعطل فوجی محاصرے کا سلسلہ جاری رکھا اور جموں وکشمیر کو مواصلاتی ناکہ بندی کے ذریعے دنیا کی سب سے بڑی جیل بنا دیا ، جس سے کشمیری عوام کو طبی یا دیگر سہولیات سے محروم رکھا گیا۔
سفیر پاکستان آفتاب احمد کھوکھر نے کہا کہ IIOJK میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال کو اجاگر کرنے کے لئے پاکستان کی مستقل کوششوں کی وجہ سے ، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے مسئلہ کشمیر پر تین بار تبادلہ خیال کیا۔ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق برائے انسانی حقوق ، ای یو ، او آئی سی ، برطانیہ کے متعدد ممبران اور امریکی قانون سازوں کے علاوہ ایمنسٹی انٹرنیشنل اور ہیومن رائٹس واچ نے آئی او جے کے میں انسانی حقوق اور انسانی صورتحال کی سنگین صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ یہاں تک کہ بین الاقوامی نگران ، نسل کشی واچ نے IIOJK میں بسنے والے مسلمانوں کے خلاف نسل کشی کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔
سفیر آفتاب احمد کھوکھر نے روشنی ڈالی کہ آئی او او جے کے میں لوگوں کی حالت زار کوایوڈ 19 کے باعث مزید خراب ہوئی ہے۔ لہذا ، عالمی برادری کو ہندوستان پر زور دیا جائے کہ وہ اپنے عمل کو پھیر دے ، دوہری لاک ڈاؤن کو ختم کرے اور محصور کشمیریوں کو طبی امداد فراہم کرنے کے لئے بین الاقوامی ماہرین صحت تک رسائی کی اجازت دے۔ انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ حکومت اور پاکستانی عوام کشمیریوں کے ساتھ اپنی غیر متزلزل سیاسی ، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے جب تک کہ انہیں یو این ایس سی کی قراردادوں کے مطابق اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حق خودارادیت کا جائز حق نہیں مل جاتا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here